بھارت میں بلیوں کو زندہ ابال کر ان کی بریانی بناکر فروخت کرنے کا اسکینڈل سامنے آیا ہے۔

0
195

چنائے شہر کے پلاورام علاقے اور دیگر جگہوں پر چھاپے مار کر پولیس نے کھانے کی دُکانوں سے 16 بلیاں برآمد کی ہیں جنہیں چھوٹے پنجروں میں رکھا گیا تھا اور ان میں سے کئی بلیوں کے جسم پر ناسور زدہ زخم تھے۔ اس کے بعد جانوروں کے حقوق پر کام کرنے والی ایک تنظیم پی ایف اے کے  چار رضاکاروں نے اس کاروبار کا راز فاش کردیا اور خفیہ کیمرہ لگا کر اس کی ویڈیو فلم بھی بنالی۔ کیمرے میں بلیوں کو ذبح کرنے کے لیے پنجرے سے نکالا جارہا ہے۔ یہ ویڈیو پولیس کو دی گئی جس کے بعد پولیس نے اپنی کارروائی شروع کردی۔

پلاورام پولیس اسٹیشن کے حکام کے مطابق لوگوں نے اپنی بلیاں غائب ہونے کی شکایات کی ہیں۔ اس کے بعد کھانے پینے کی دُکانوں پر چھاپے مارے گئے جہاں بلیوں کو مٹن کا گوشت کہہ کر بریانی کی صورت میں فروخت کیا جارہا تھا۔

بحال ہونے والی بلیوں کو پی ایف اے میں رکھا گیا ہے جن کی حالت بہت بری ہے۔ ان میں سے بعض زخمی اور بعض کو ناسور ہوچکا ہے۔ پی ایف اے کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ چنائے میں رہنے والا ایک خانہ بدوش گروہ بلیوں کا گوشت کھاتا ہے لیکن خدشہ ہے کہ بلیوں کا گوشت سرخ گوشت کے طور پر 60 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت کیا جارہا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here