بلوچستان میں ہر سال ٹی بی کے 27 ہزار سے زائد نئے مریضوں کا اضافہ

کوئٹہ: بلوچستان میں صحت عامہ کی صورتحال قطعی تسلی بخش نہیں ہے، جس کا اندازہ صوبے میں مختلف امراض اور ان میں مبتلا مریضوں کی تعداد کی بڑھتی ہوئی شرح سے لگایا جاسکتا ہے۔علاج معالجے کی سہولیات کا فقدان اپنی جگہ مگر معاشی و سماجی مسائل اور غربت کے علاوہ عوام میں امراض کی روک تھام کے حوالے سے شعور و آگہی کا نہ ہونا بھی امراض کے پھیلنےکا بڑا سبب ہے، یہی صورتحال ‘تپ دق’ جسے عرف عام میں ‘ٹی بی’ کہا جاتا ہے، کے حوالے سے بھی درپیش ہے۔عالمی ادارہ صحت کی گلوبل ٹی بی رپورٹ 2017 کے مطابق بلوچستان میں ہر سال 27 ہزار سے زائد ٹی بی کے نئے مریضوں کا اضافہ ہو رہا ہے۔ماہرین کے مطابق ٹی بی کے مرض میں اضافے کی بڑی وجہ غربت اور شعور و آگہی کا فقدان ہے اور ان مسائل کا شکار کوئی بھی شخص اس مرض میں مبتلا ہوسکتا ہے، یہی وجہ ہے کہ شہری علاقوں کے سوا بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں اس مرض کی صورتحال کافی گھمبیر ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں