آٹھ سالہ کمسن بچی آصفہ کے قتل و عصمت ریزی واقعے کے مجرموں کیلیے سزائے موت کا مطالبہ

جموں، راجوری،سرن کوٹ ، منڈی، کشتواڑ،بانہال ، بھدرواہ میں کینڈل لائٹ احتجاجی مظاہرے
آٹھ سالہ کمسن بچی آصفہ کے قتل و عصمت ریزی واقعے کے مجرموں کیلیے سزائے موت کا مطالبہ
جموں، راجوری، : کٹھوعہ میں آٹھ سالہ کمسن بچی آصفہ کے قتل و عصمت ریزی واقعے کے خلاف جموں، راجوری،سرن کوٹ ، منڈی، کشتواڑ،بانہال ، بھدرواہ میں کینڈل لائٹ احتجاجی مظاہرے ہوئے ہیں ان مظاہروں میں مقتولہ کی عصمت دری و قتل میں ملوث تمام ملزمین کو سزائے موت دینے کا مطالبہ کیا گیا ،ظاہرین نینے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پرمعصوم بچی کے قاتلوں کو سزا دو،ہم کیا چاہتے انصاف نعرے درج تھے ۔ راجوری مسلم یوتھ نے کٹھوعہ سانحہ پرنابالغہ بچی کے حق میں راجوری گوجر منڈی سے کینڈل مارچ نکالا جوڈی سی آفس کے باہر اختتام پذیر ہوا ۔ اس موقعہ پرمقررین نے کہاکہ کٹھوعہ مقتولہ کو انصاف ملنا چاہئے اور قاتلوں کو سزائے موت دی جائے تاکہ آئندہ اس طرح کے شرمناک واقعات رونما نہ ہونے پائیں ۔ سرنکوٹ میں نوجوانوں کی جانب سے رسانہ قتل کیس پر زور دار احتجاج کیا گیا اور اس ددوران کینڈل مارچ بھی نکلا ۔احتجاج کی قیادت خوشنود حسین شاہ اور محمود خواجہ وخورشید احمد کر رہے تھے۔ مظاہرین نے بار ایسو سی ایشن جموں اوربار ایسو سی ایشن کٹھوعہ کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے کہاکہ قانون کے پاسداروں کا یہ رویہ قابل افسوسناک ہے اور ملزمان کی پشت پناہی کرکے انہوںنے ساری دنیا میں بدنامی کمائی ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ کرائم برانچ نے بہت ہی اچھے طریقے سے کیس کی جانچ کی اور ملزمان کو بے نقاب کیاتاہم افسوس کی بات ہے کہ موجودہ سرکار کے وزرا بھی ملزمان کو بچانے کیلئے میدان میں ہیں ۔مظاہرین اس موقعہ پر کینڈل مارچ بھی نکالااور قاتلوں کو پھانسی دینے کی مانگ کی ۔انہوںنے کہاکہ وہ رسانہ کے متاثرہ کنبے کو انصاف دلانے کیلئے کسی بھی حد تک جانے کو تیار ہیں ۔تحصیل صدر مقام منڈی میں پیر پنچال یوتھ پارلیمنٹ منڈی کی جانب سے کینڈل مارچ نکالا گیا جس میں بڑی تعدا د میں نوجوانوں نے حصہ لیتے ہوئے رسانہ کی 8سالہ بچی کے حق میں انصاف کی مانگ کی ،بھدرواہ میں بھی آصیفہ کو انصاف دلانے اور قصورواروں کو پھانسی پر لٹکانے کے حق میں زبردست احتجاج کیا گیا ۔سماج کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے سیول سو سائٹی بھدرواہ کے بینر تلے اس کے صدر نجمس ثا قب کی قیادت میں جمع ہوئے اور انہوں نے انصاف کے حق میں اور حکومت ، بی جے پی اور آر ایس ایس مخالف نعرے بلند کئے۔مظاہرین جامع مسجد بھدرواہ میں اکٹھے ہوئے جہاں سے ایک احتجاجی ریلی نکالی گئی جو مختلف بازاروں سے ہوتے ہوئے واپس جامع مسجد میں اختتام پذیر ہوئی۔کٹھوعہ میں نابالغ لڑکی کی عصمت دری و قتل کے خلاف امام مرکزی جامع مسجد چھاترو مولانا عبدالواحد کی قیادت میں زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرہ میں لوگ بڑی تعداد میں شامل ہوئے مظاہرین نے ہاتھوں میں موم بتیاں لی ہوئی تھی جبکہ کئی لوگوں نے ہاتھوں میں تختیاں لی ہوئی تھی جن پر نابالغ لڑکی کے حق و انصاف کے نعرے درج تھے جبکہ قتل و عصمت دری میں شامل لوگوں کے خلاف نعرے درج تھے۔ اس موقعہ پر کینڈل مارچ میں لوگوں نے نابالغ متاثرہ بچی کے حق میں فوری انصاف اور ملوثین کو سزائے موت کے نعرے لگا رہے تھے بانہال میں نوجوانوں کی طرف سے آصفہ کے فوری انصاف کیلئے ایک احتجاجی کینڈل مارچ نکالا گیا جس کی قیادت نوجوان لیڈر دانش فاروق میر کر رہے تھے ۔ٹورسٹ ہوسٹل بانہال سے نوجوانوں نے ایک جلوس نکالا اور وہ شاہراہ پر نعرے لگاتے ہوئے اور شاہراہ پر کئی چکر لگانے کے بعد بس سٹینڈ بانہال میں موم بتیاں جلا کر آصفہ بانو کو فوری طور پر انصاف کرنے کا مطالبہ کیا۔ کشتواڑ سیول سو سائٹی نے شاکر صدیقی کی رہنمائی میں ایک کینڈل مارچ کا اہتمام کیا جس کا مقصد کھٹوعہ کی معصوم بچی کو انصاف دلانا تھا۔ سینکڑوں شہری ڈاک بنگلہ کے قریب جمع ہوئے اور کچھ دیر کیلئے خاموش جلوس چلا اس کے بعد لوگوں نے نعرے لگانے شروع کئے۔ انہوں نے آصفہ کے قتل اور عصمت ریزی میں گرفتار کئے گئے افراد کو جلد از جلد کیفر کردار تک پہنچانے اور انہیں سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں