14

کراچی کے علاقے ڈیفنس میں پولیس کی فائرنگ سے نوجوان ہلاک

کراچی کے علاقے ڈیفنس خیابان اتحاد میں پولیس اہلکاروں کی فائرنگ سے انتظار نامی نوجوان ہلاک ہوگیا۔پولیس ذرائع کے مطابق اینٹی کار لفٹنگ سیل (اے سی ایل سی) کے اہلکاروں نے گاڑی مشکوک سمجھ کر اسے رکنے کا اشارہ کیا اور نہ رکنے پر فائرنگ کی گئ جس سے نوجوان ہلاک ہوگیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے نوجوان کی شناخت انتظار احمد ولد اشتیاق احمد کے نام سے ہوئی ہے، پولیس کی جانب سے ابتدائی طور پر کہا گیا کہ فائرنگ موٹر سائیکل سوار ملزمان نے کی۔ بعد ازاں ڈی آئی جی سی آئی اے ثاقب اسماعیل نے جناح اسپتال کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ خیابان اتحاد میں پکٹ پر اینٹی کار لفٹنگ سیل کے اہلکاروں نے گاڑی کو مشکوک سمجھ کر رکنے کا اشارہ کیا اور نہ رکنے پر فائرنگ کی۔انہوں نے بتایا کہ واقعے میں ملوث چاروں اہلکاروں کو ساوتھ پولیس کے حوالے کردیا گیا ہے جب کہ مقتول کے والدین مقدمہ درج کراسکتے ہیں۔پولیس کی تحقیقات کے مطابق جائے وقوعہ سے گولیوں کے 16 خول ملے ہیں جب کہ مقتول کی گاڑی میں لڑکی موجود تھی جو بعد میں رکشے میں چلی گئی۔دوسری جانب پولیس نے واقعہ کا مقدمہ بھی درج کرلیا تاہم اس میں کسی کو ملزم نامزد نہیں کیا گیا۔دوسری جانب مقتول کے والد کی جانب سے دشمنی کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے جن کا کہنا ہے کہ بیٹے کا 2 روز قبل دو لڑکوں سے جھگڑا ہوا تھا، ایک لڑکا پولیس افسر اور دوسرا وکیل کا بیٹا تھا۔
انتظار کے والد نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ان کا بیٹا بیرون ملک تعلیم حاصل کر رہا ہے جو 19 نومبر کو ہی چھٹیوں پر آیا تھا جسے قتل کردیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ‘مجھے پولیس سے کوئی امید نہیں، چیف جسٹس اور آرمی چیف سے امید ہے اور مطالبہ کرتے ہیں کہ انصاف فراہم کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں