وی وی آئی پی موومنٹ کیس: چیف جسٹس کی آئی جی سندھ کو حلف نامہ جمع کرانے کی ہدایت

کراچی: سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے وی وی آئی پی موومنٹ ازخود نوٹس کیس نمٹاتے ہوئے آئی جی سندھ کو اس حوالے سے حلف نامہ جمع کرانے کی ہدایت کردی کہ شہر میں مستقل سڑکیں بلاک نہیں ہوتیں۔سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں آج وی وی آئی پی موومنٹ ازخود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔سماعت کے دوران انسپکٹر جنرل (آئی جی) سندھ اے ڈی خواجہ عدالت میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ سے استفسار کیا کہ ‘سڑکوں کو بند کرنے سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، وی وی آئی پی شخصیات کے لیے سڑکیں کیوں بند کردی جاتی ہیں؟’
جس پر اے ڈی خواجہ نے جواب دیا کہ ‘وی وی آئی پی موومنٹ کے لیے قوانین موجود ہیں، ان کے مطابق انتظامات کیے جاتے ہیں اور ہم صرف 2 منٹ کے لیے ٹریفک بند کرتے ہیں’۔اس موقع پر چیف جسٹس نے اے ڈی خواجہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’آئی جی صاحب، میں بھی تو وی وی آئی پی ہوں، میرے لیے تو سٹرک بلاک نہیں ہوتی‘۔آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ ‘کہیں سڑکیں بند نہیں ہوتیں، صرف وی آئی پی موومنٹ کے لیےانتظامات کیے جاتے ہیں’۔جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ‘آپ انتظامات ضرور کریں مگر شہریوں کو کم سے کم تکلیف ہو، وی وی آئی پی موومنٹ چاہے کسی کی بھی ہو، شہریوں کو تکلیف سے بچایا جائے’۔سماعت کے بعد چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ازخود نوٹس کیس نمٹاتے ہوئے آئی جی سندھ کو ہدایت کی کہ ‘آپ حلف نامہ جمع کرائیں کہ مستقل سڑکیں بلاک نہیں ہوتیں، ہم آپ کے حلف نامے کا جائزہ لیں گے’۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.