عدالتی فیصلہ وہی مذاق ہے جو ملک کے17 وزرائے اعظم کے ساتھ ہوا،مریم اورنگزیب

سپریم کورٹ کے فیصلے سے نوازشریف کی سیاست کا وہ دور شروع ہوا ہے جس سے ہمارے مخالفین کو ڈرنا چاہیے
یہ وہی فیصلہ ہے جو 1999ء میں طیارہ کیس میں بھی آیا تھا، شہید بھٹو کو پھانسی چڑھایا گیا اور بینظیر بھٹو کو شہید کیا گیا
آج پھر پاکستان کے تیسری مرتبہ منتخب وزیراعظم کو تاحیات نااہل کیا گیا،عوام اس قسم کے فیصلے کے متحمل نہیں ہوسکتے
سپریم کورٹ کے جس فیصلے میں نوازشریف کو ایک اقامے پر نااہل کیا گیا اس کا ٹرائل ہورہا ہے اور وہ مکمل نہیں ہوا
نوازشریف کو پہلے نااہل کیا گیا، پارٹی کی صدارت سے ہٹایا گیا اور سینیٹ الیکشن میں مقبول ترین جماعت کو حصہ لینے سے روکا گیا
جس وزیراعظم کو عوام نے منتخب کیا ہو اس کی نااہلی کا فیصلہ عوام کرے گی، جس نے ملک کا آئین توڑا اس کے لیے کسی قسم کا کوئی سوموٹو ایکشن نہیں
(ن) لیگ کے ووٹر دل چھوٹا نہ کریں، جس عزم کو ووٹر نے اٹھایا اس فیصلے کے بعد وہ اور بھی مضبوط ہوگا، ملک میں ووٹ کی پامالی اب نہیں ہوسکتی
(ن)لیگ اور نوازشریف نے ہمیشہ عدلیہ کی عزت، وقار اور ملک میں آئین و قانون کی بالادستی کی بات کی، فیصلہ پر رد عمل عوام اور نوازشریف کا حق ہے
جو بھی منتخب وزیراعظم کے ساتھ ہوتا آیا اس سے آج تک پاکستان جمہوریت کا مقدمہ لڑرہا ہے، اس کو نواز شریف آخری مراحل تک پہنچائیں گے
ملک کے آئینی ادارے سب کے لیے قابل عزت ہیں، سب کو آئینی اداروں کی عزت کرنی چاہیے، سپریم کورٹ کی عزت بھی ہم سب پر لازم ہے
کسی ادارے کے بارے میں کوئی ایسی چیز بیان نہیں کی جو کسی کی ہتک عزت ہو، وزیر مملکت برائے اطلاعات کی سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو

اپنا تبصرہ بھیجیں