اسلام آباد۔۔پر امن افغانستان کی ضرورت پاکستان سے زیادہ کسی اور ملک کو نہیں، عمران خان

پاکستان میں افغان مہاجرین کے ساتھ مہمانوں کی طرح کا برتائو کیا گیا
دونوں ممالک کے مابین تعلقات کا مستقبل بقائے باہمی پر قائم ہے
چئیرمین تحریک انصاف کی افغان سفیرعمر زخیلوال سے گفتگو.
چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں افغان مہاجرین کے ساتھ مہمانوں کی طرح کا برتائوکیا گیا، پاکستانی عوام افغان مہاجرین کو عزت و احترام کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، دونوں ممالک کے مابین تعلقات کا مستقبل بقائے باہمی پر قائم ہے، افغانستان میں امن و استحکام ہر پاکستانی کی خواہش اور دل کی آواز ہے جبکہ پر امن افغانستان کی ضرورت پاکستان سے زیادہ کسی اور ملک کو نہیں۔جمعرات کوتحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان سے پاکستان میں افغان سفیرعمر زخیلوال نے ملاقات کی جس میں پاک افغان تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں افغان مہاجرین کے ساتھ مہمانوں کی طرح کا برتاو کیا گیا، پاکستانی عوام افغان مہاجرین کو عزت و احترام کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، دونوں ممالک کے مابین تعلقات کا مستقبل بقائے باہمی پر قائم ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے مابین سرحدوں کی بندش معاملات کا حل نہیں، آزاد تجارت اور نقل و حمل میں سہولت دونوں ممالک کے مفاد میں ہے، نسلوں پر محیط تعلقات میں پختگی اور نکھار کے لیے حکومتوں کو محنت کرنا ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن و استحکام ہر پاکستانی کی خواہش اور دل کی آواز ہے، پر امن افغانستان کی ضرورت پاکستان سے زیادہ کسی اور ملک کو نہیں جب کہ جغرافیہ ہمیں ایک دوسرے کے لیے لازم و ملزوم ٹھہراتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں