عدالت کا ڈیکورم ہے، یہ آپ کا ٹی وی پروگرام نہیں، پاکستان کی عزت بچانے کیلئے کردار ادا کرنا چاہیے، چیف جسٹس کی عامر لیاقت کی سرزنش

ایگزیکٹ کیس، جعلی ڈگریوں کی خبر سچ ہوئی تو کوئی نہیں بچے گا، سپریم کورٹ
معاملہ دوبارہ اجاگر ہورہا ہے جس سے ملک کی بدنامی ہورہی ہے، پاکستان کی بدنامی پر ازخود نوٹس لینا ہماری غلطی ہے،چیف جسٹس
ہمیں تمام ملزمان کے نام لکھوا دیں، اگر یہ واقعہ نہیں ہوا تو جو مہم چلارہے ہیں ان کے خلاف ایکشن ہوگا،جسٹس ثاقب نثار
سب سے پہلے 15 مئی 2015 کو ایگزیکٹ سے متعلق خبر شائع ہوئی، ایگزیکٹ کا ہیڈ کوارٹر کراچی میں ہے،ڈی جی ایف آئی اے
ادارے کی امریکا میں 331 یونی ورسٹیز کی ویب سائٹ بنائی گئیں جن پر مختلف افراد کے فوٹو لگائے گئے،بشیر میمن
میری ڈگری نہ جعلی ہے نہ ایگزیکٹ سے لی ہے،عامر لیاقت کا عدالت میں بیان
مجھے اچھی خبر ملنے چاہیے کہ عامر لیاقت نے ایگزیکٹ سے ڈگری نہیں لی، ڈگری لی ہے تو اسے چھوڑوں گا نہیں،چیف جسٹس
عدالت کا ڈیکورم ہے، یہ آپ کا ٹی وی پروگرام نہیں، پاکستان کی عزت بچانے کیلئے کردار ادا کرنا چاہیے، چیف جسٹس کی عامر لیاقت کی سرزنش
ایگزیکٹ کیس کی سماعت کل تک ملتوی ، سندھ ہائیکورٹ، ماتحت عدالتوں کے رجسٹرار اور تمام ملزمان کو جمعہ کو طلب

اپنا تبصرہ بھیجیں