بیرون ملک سے سرمایہ واپس لانے کیلئے اقتصادی پیکیج کا اعلان آج متوقع

اسلام آباد: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی طرف سےاقتصادی شعبے کے لیے آج پیکج کااعلان متوقع ہے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت اکنامک ایڈوائزری کونسل کا اجلاس جاری ہے جس میں اقتصادی شعبے کے لئے پیکیج پر تفصیلی غور کیا جارہا ہے۔ذرائع کے اقتصادی پیکیج کےخدوخال اکنامک ایڈوائزری کونسل کےاجلاس میں طے ہوں گے اور وزیراعظم کےاعلان کردہ پیکیج کوصدارتی آرڈیننس کے ذریعے فوری طورپرنافذ کیا جائے گا۔ذرائع کا کہنا ہےکہ پیکیج کے تحت بیرون ملک سے 30 جون 2018 تک 2 فیصد ٹیکس اداکرکے سرمایہ واپس لایا جاسکتا ہے اور سرمایہ واپس لانے والوں سے باز پرس نہیں ہوگی جب کہ اندرون ملک جائیداد رکھنے والے بھی اس پیکج سے مستفید ہوسکیں گے۔ذرائع کے مطابق پیکیج کے تحت بیرون ملک سرمایہ ڈکلیئر کرنے والوں سے 5 فیصد ٹیکس وصول کیا جائے گا، بیرون ملک سرمائے پر5 فیصد ٹیکس اداکرنے والوں کا سرمایہ قانونی شمار کیا جائے گا، این ٹی این نہ رکھنے والے غیرملکی کرنسی اکاؤنٹ کھولنے کے مجاز نہیں ہوں گے۔
ذرائع کا کہنا ہےکہ باہر سے آنے والی ترسیلات پر ٹیکس لگانے کی اسکیم بھی زیر غور ہے تاہم ٹیکس کی شرح کا فیصلہ ایڈوائزری کونسل آج کرے گی۔
اس کےعلاوہ باہر سےگاڑیوں کی درآمد پر شرائط نرم کرنےکا اعلان بھی آج متوقع ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.