مردان میں اسما کا قاتل ساتھی سمیت گرفتار،اعتراف جرم کرلیا،آئی جی خیبرپختونخوا

ملزم محمد نبی مقتول بچی کا پڑوسی ہے جس کی عمر 15سال ہے ،صلاح الدین محسود
بچی نے مزاحمت کی اور مدد کے لیے چیخ و پکار کی تو ملزمان نے اسے گلا دبا کرقتل کردیا
آئی جی خیبرپختونخوا کی پشاور میں پریس کانفرنس
مردان میں مبینہ زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی اسما کا کم عمر سفاک قاتل گرفتار ہوگیا جس نے اپنے گھناونے جرم کا اعتراف بھی کرلیا ہے۔بدھ کو پشاورمیں پریس کانفرنس کرتے ہوئے آئی جی خیبرپختونخوا پولیس صلاح الدین محسود نے کہا کہ اسما قتل کیس میں ملزم محمد نبی نے اعتراف جرم کرلیا جس کی عمر 15 سال ہے۔ مردان کی 4 سالہ ننھی اسما قتل کیس کو 25 روزمیں حل کیا۔ملزم محمد نبی اسما کا پڑوسی ہے جب کہ اس کا دوسرا ساتھی عبد القادر بھی حراست میں لے لیا گیا جو بچی کا پڑوسی اور رشتہ دار بتایا جاتا ہے۔ بچی پر جنسی تشدد کرنے کی کوشش کی گئی تاہم بچی نے مزاحمت کی اور مدد کے لیے چیخ و پکار کی تو ملزمان نے اسے گلا دبا کرقتل کردیا۔ پولیس بچی کی گردن پر لگے خون اور ڈی این اے کی مدد سے ملزم تک پہنچے میں کامیاب ہوئی۔آئی جی خیبرپختونخوا کا کہنا تھا کہ پولیس اس ایک صوبے کی نہیں بلکہ پورے ملک کی پولیس ہے جو دہشت گردی کے خلاف بھی فرنٹ لائن پر ہے۔ کوہاٹ کی عاصمہ رانی قتل کیس سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ لڑکی کے اہلخانہ نے ہم پراعتماد کیا اور عاصمہ کے کیس میں بھی 2 ملزمان گرفتار ہیں جب کہ

اپنا تبصرہ بھیجیں