برطانیہ میں شدید سردی، کینیڈا میں برف باری سے نظام زندگی مفلوج

بحر اوقیانوس کی ساحلی علاقوں میں شدید سردی کی لہر جاری
طوفان ڈائلین برطانیہ کے ساحلی علاقوں سے ٹکرائے گا ، تیز ہوائوں کے ساتھ بارش بھی ہوگی،محکمہ موسمیات.
امریکہ و برطانیہ میں شدید سردی سے نظام زندگی متاثر جب کہ پروزاوں میں بھی خلل پڑا ہے۔کینیڈا میں نیاگرا آبشار جم گیا، درجہ حرارت منفی 67ڈگری سینٹی گریڈ تک جا پہنچا، سمندری طوفان ڈائلین برطانیہ کے ساحلی علاقوں سے ٹکرانے کا امکان ہے، قطب شمالی سے چلنے والی ہوائوں کے سبب بحر اوقیانوس کی ساحلی علاقوں میں شدید سردی کی لہر جاری ہے۔واشنگٹن، فلاڈلفیا، نیویارک سٹی، بوسٹن اور دیگر شہروں میں طیاروں کی آمدورفت کا شیڈول متاثر ہونے لگا، مقامی حکام نے سرد موسم کے پیش نظر لوگوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کی ہے، کینیڈا بھی ان دنوں شدید ترین سردی کی لپیٹ میں ہے۔شدید برف باری کے باعث جہاں نظام زندگی بری طرح مفلوج ہے اور سڑکوں پر ٹریفک کے بے شمار حادثات رونما ہوئے ہیں وہیں کینیڈا اور امریکی سرحد پر واقع نیاگرا آبشار بھی جم گیا ہے اور وہاں درجہ حرارت منفی 67ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے دوسری جانب برطانیہ میں شدید سردی کی لہر جاری ہے۔برطانوی محکمہ موسمیات کے مطابق سمندری طوفان ڈائلین برطانیہ کے ساحلی علاقوں سے ٹکرائے گا جس کے نتیجے میں تیز ہوائوں کے ساتھ بارش بھی ہوگی۔محکمے موسمیات کے مطابق آئرلینڈ اور جنوبی اسکاٹ لینڈ میں 80میل فی گھنٹا کی رفتار سے ہوائیں چلنے کابھی امکان ہے جس کے بعد عوام کو محتاط رہنے کی وارننگ بھی جاری کی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں